20سالہ خوبصورت لڑکی کی نیند میں عجیب و غریب حرکت، جس نے بھی سنا کانوں کو ہاتھ لگا لئ | Daily Qom
تازہ تر ین

20سالہ خوبصورت لڑکی کی نیند میں عجیب و غریب حرکت، جس نے بھی سنا کانوں کو ہاتھ لگا لئ

سکاٹ لینڈ کی ایک بیس سالہ لڑکی جس کا نام کیٹ آرچی بالڈ ہے‘ کیٹ یونیورسٹی آف ابرڈین میں فلسفے کی طالبہ ہیں۔ یونیورسٹی میں ایڈمشن لینے سے پہلے کیٹ دبلی‘ پتلی اور سمارٹ تھیں‘یونیو ورسٹی کے پہلے سال کیٹ نے محسوس کیا کہ یکایک وہ بہت بھاری بھرکم ہوگئی

ہے اور اس کا وزن تیزی سے بڑھتا چلا جارہا ہے،کیٹ کیلئے یہ بات پریشانی کا باعث تھی کیونکہ اس کی خوراک نہایت متوازن اور نارمل تھی‘کیٹ کا وزن جب آہستہ آہستہ بڑھنا شروع ہوا اور اس کا سائز دس فریم سے سولہ فریم تک چلا گیا تو اس کی پریشانی دگنی ہوگئی۔ اس کی سمجھ میں نہیں آرہا تھا کہ یہ کیا ہورہا ہے‘

کیٹ نے اپنے اس مسئلے کا سبب تلاش کرنے کی بہت کوشش کی، اس نے اپنے ڈاکٹر سے بھی بار بار مشورہ کیا مگر کچھ پتا نہ چل سکا۔ایک روز جب کیٹ صبح نیند سے بیدار ہوئی تو وہ یہ دیکھ کر حیران رہ گئی کہ اس کا بستر کھانے پینے کی اشیاء4 کے درجنوں پیکٹس اور ریپرز سے بھرا ہوا ہے۔ یہ سب کیا تھا؟

اس چیز نے کیٹ کو الجھا کر رکھ دیا۔ کافی غور وخوض اور دوستوں سے مشورے کے بعد اس پر یہ منکشف ہوا کہ وہ سوتے میں کھانے کی بیماری میں مبتلا ہوگئی ہے اور رات کو سوتے ہوئے بے تحاشا کھاتی رہی ہے‘ یہی وجہ تھی کہ اس کا وزن بڑی تیزی سے بڑھ رہا تھا اور حیرت انگیز بات یہ ہے کہ اسے اس کی خبر تک نہیں ہوئی

اور اتفاق سے ہاسٹل میں بھی کسی دوست یا ساتھی نے اسے سوتے میں کھاتے ہوئے نہ دیکھا اور نہ ہی پکڑا۔کیٹ کا کہنا ہے’’میری سمجھ میں کچھ نہیں آرہا تھا کہ میرا وزن اتنی تیزی سے کیوں بڑھ رہا ہے جبکہ میری ڈائیٹ بھی متوازن ہے۔ دوسری جانب میرے ہاسٹل کے کچن سے مسلسل خوراک غائب ہو نے کی اطلاعات بھی آ رہی تھیں۔

کبھی بسکٹ کے پیکٹ غائب ہوجاتے ، کبھی چاکلیٹ کینڈیز ، کبھی پنیر کے پیکٹ کم ہوجانے کی خبریں ملتیں۔ ایسا لگتا تھا کہ ہمارے کچن کا راستہ کسی جن نے دیکھ لیا ہے اور وہ چپکے سے ہمارے کچن میں گھستا ہے اور وہاں رکھی ہر چیز کھاجاتا ہے۔مسلسل میرا وزن بڑھتے دیکھ کر ہر کوئی مجھ پر شک کر رہا تھا

اور میں جواب میں یہی کہتی تھی کہ بھئی یہ کام میں نہیں کرتی، آپ کی کوئی چیز میں نے نہیں کھائی۔ پھر یہ راز ایک صبح اس دن کھلا جس دن میں نے اپنے بستر پر چاکلیٹ، بسکٹ، ٹافیوں اور دیگر اشیا کے خالی پیکٹس اور ریپرز کے ڈھیر پڑے دیکھے۔ اس وقت مجھ پر یہ انکشاف ہوا کہ وہ کھانے پینے کی اشیاء4 4 چرانے والا کوئی اور نہیں بلکہ میں خود ہی ہوں

اور یہ کہ میں اس وقت نیند میں کھانا کھانے کی بیماری میں مبتلا ہو چکی ہوں جس کا نام Nocturnal sleep eating Disorderہے۔کیٹ کہتی ہیں کہ جس طرح لوگوں کو نیند میں چلنے کی عادت ہوتی ہے اسی طرح مجھے نیند میں کھانے کی عادت ہے۔ ایک عرصے کیٹ اپنی ہاسٹل کی سہیلیوں کے ساتھ لڑتی رہی کہ وہ اس کی فرج سے کھانا نکال لیتی ہیں

اور اس کے بیڈ کے قریب خالی لفافے اور ریپر وغیرہ پھینک دیتی ہیں۔بعد میں پتہ چلا کہ کیٹ Nocturnal Eating Disorder کا شکار ہے۔ اس بیماری کے مریض نیند میں کھانا کھاتے ہیں اور انہیں اس کا احساس تک نہیں ہوتا۔

کیٹ کہتی ہے کہ اسے معلوم ہوا ہے کہ وہ رات کو اٹھ کر کچن میں جاتی ہے اور فرج میں جو بھی کھانے کی چیز پڑی ہو اٹھا کر اپنے بستر پر لے آتی ہے اور پھر اسے چٹ کرجاتی ہے۔ ڈاکٹروں نے بھی کیٹ کی بات کی تصدیق کی ہے اور اس مسئلے کو نفسیاتی عارضے ADHD کی ادویات کا سائیڈ ایفیکٹ بتایا ہے۔

اس وقت سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں
صحت اورتندرستی
No News Found.
عجیب و غریب
No News Found.